Thursday, September 19, 2019

Udas Naslain Novel PDF Download by Abdullah Hussain

Download Udas Naslain PDF Urdu novel by Abdullah Hussain.
You can find the links on this page.






First published in 1963. A masterpiece of realistic fiction, Udas Naslain is one of the Urdu novels, which continuously attracting the readers, even after a long period of its publication.






Udas Naslain PDF Novel Download by Abdullah Hussain
The author Abdullah Hussain wrote it brilliantly and the way he creates a scene is really admirable. You will enjoy the conversations between its characters. In addition, there are a lot of magnificent moments and amazing scenes that you will love to read more than once.

However, it is still a depressing read. It portrays the real characteristic of human nature and you will see the bitter realities of life as well. The plot describes various aspects of a generation and a reader can learn about the feudal system of British India.

Let's read what the author Abdullah Hussain says about his novel Udas Naslain


He says in the introductory page of Udas Naslain PDF: "Every author and poet, writes for his fellow generation. It never happened that any author takes a pen and says that he is going to create literature for the next generations. However, if an upcoming generation that is coming after his own generation, also reads his literary works as keenly and feels itself as connected with it then this is like a bonus for that author. And the author, who is just like a pen labor, feels the same happiness that a labor feels when he gets a one month extra salary on the occasion of Eid. And he still thankful for this despite that it was not a donation, but it was his right".


An excerpt from this novel in Urdu language






Read below an excerpt from Udas Naslain PDF novel

یکایک گلی میں شور اٹھا اور چند لمحوں کے اندر شور قیامت معلوم ہونے لگا۔ پھر روشن علی خان کے گھر کا دروازہ دھڑا دھڑ کوٹا جانے لگا۔ گھر کے مالک نے کھڑکی سے جھانک کر دیکھا تو ہندوستانی سپاہیوں کی ننگی تلواریں اور برچھیوں کے پھل مشعلوں کی روشنی میں چمکتے نظر آئے۔ گلی میں ہر طرف ہاہا کار مچی تھی اور سر ہی سر نظر آتے تھے۔ تھوڑی دیر تک اندر سے کوئی جواب نہ ملا تو باغیوں نے دروازہ توڑنے کا فیصلہ کیا۔

اول اول تو محلے کے لوگ گھروں میں دبکے بیٹھے رہے کہ جانے کس کی موت آئی ہے پھر جب بات کھل گئی کہ اس غیض و غضب کا رخ محض روشن علی خان کے گھر کی جانب ہے تو چند سربراہ دبکے دبکائے نکلے اور کسی نہ کسی طور اس دروازے تک پہنچے جس کے توڑے جانے کی تجویزیں ہو رہی تھیں۔ وہاں پر انہیں جو بتایا گیا وہ یوں تھا: کرنل جانسن، چھاونی کے کمانڈنگ افسر، بھیس بدل کر گھیرے میں سے بچ نکلے ہیں اور دلی پہنچنا چاہتے ہیں۔ رستے میں چند سپاہیوں سے ان کی مڈبھیڑ بھی ہوئی لیکن وہ ان میں سے تین کو موت کی نیند سلا کر اور خود تلوار کا زخم کھا کر نکل آئے ہیں۔ اب ان کے خون کی لکیر اس دروازے میں داخل ہوتی ہے۔ انہیں ہمارے حوالے کیا جائے، ورنہ دروازہ توڑ کر گھر کے مکینوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا۔ محلے کے سربراہوں نے، کہ خود خوفزدہ تھے، ہر قسم کی مدد کا وعدہ کیا اور باغیوں کے ٖغصے کو فی الوقت ٹھنڈا کر کے کسی نہ کسی راستے سے مکان میں داخل ہوئے۔ اب ہر ایک سربراہ اپنی اپنی پگڑی اتار کر روشن علی خان کے پیروں پہ رکھ رہا ہے، منتیں کر رہا ہے، دھمکیاں اور گھرکیاں دے رہا ہے پر ہمت کا دھنی روشن علی خان اپنے اٹل فیصلے پر قائم ہے کہ جان جاتی ہے تو چلی جائے پر زخمی مہمان کو دشمنوں کے حوالے نہ کروں گا۔

You might also like: Zavia by Ashfaq Ahmed

Udas Naslain PDF link







Udas Naslain novel PDF  ||  Download






Friday, September 13, 2019

Namal Novel by Nimra Ahmed PDF Download or Read Online Complete

Namal novel by Nimra Ahmed PDF download complete or read online.
We have shared links on this page.






Namal novel first appeared in Khawateen digest in monthly episodes. When it was being published, the readers used to wait impatiently for the new episodes. As usual, once again Nimra has come with a narrative that also has religious content and the title of the novel has been taken from the Holy Quran. The meaning of this title word Namal is "The Ant".






The plot is all about the relationships between the two families, an upper class family and a middle class family. A great story of hate and love, sacrifice and selfishness, emotions and cruelty and murders and revenge. You will see the war between good and evil. How these rich people play some evil games with the power of money.

Read also: Jannat K Pattay

Nimra Ahmed's thoughts about her novel Namal


Namal Novel by Nimra Ahmed PDF Download or Read Online Complete
In the introductory chapter of this book, Nimra says: "This is the story of the light and the sins that are connected with blood and heart. You will see various kinds of people in one place and they represent any of the stages of our lives. They all have good and bad things. The good characters of Namal are not so good and the bad characters are not completely bad. You should adopt, the good things these characters have and learn lessons from their evils. Do your catharsis from their sufferings and set up a way for yourself from their achievements. The reason to show heart-rending events in the stories is that the reader's heart, which is becoming cold like the ice due to his fast life, could be broken by hitting it with an ax. When it will break, then the light and heat will enter into it. Then it will melt and become soft and will feel emotions as strongly as it felt in the past. If we don't write or read like this, then the troubles and the harsh realities of life will gradually make us cold-hearted and ruthless. That's why I have written Namal so that you can recognize the healing of your heart abnormalities, and also reconnect with your blood relations".

Another great work: Mushaf by the same author

Read some of the best quotes in Urdu language






جوانی میں دین بائی چوائس ہونا چاہیئے، بائی چانس نہیں۔ یہ جس جذبے اور دل سے تم لوگ اس عمر میں عبادت کر سکتے ہو نا، یہ بڑھاپے میں نہیں ہو گا۔ غلط لگتا ہے تم لوگوں کو کہ بوڑھے ہو کر عبادت کی ساری کمی پوری کر لو گے۔ بڑھاپے میں روز کیلشیم کھانا جوانی کے دنوں کے روز تین گلاس  خالص دودھ پینے کے برابر نہیں ہو سکتا۔ روح بھی ہڈیوں کی طرح ہے۔ جوانی سے اسے عبادت پہ مائل کرو گے تو بڑھاپے میں درد اور تکلیف کم ہو گی۔

کسی کو معاف کرنے کا یہ مطلب نہیں ہے کہ اس کو گلے سے لگایا جائے، اس کو دوست بنا لیا جائے۔ صرف ایک عہد کرنا ہوتا ہے کہ جو اذیت اس نے مجھے دی وہ میں نے اس کو نہیں دینی۔ اور اگر دوبارہ اس پہ ظلم کرنے کا موقع آئے تو اب میں نے وہ نہیں کرنا جو پہلے کیا تھا۔

جو گمراہی کے بعد ہدایت پا لینے کی قدر کرتا ہے اور زیادہ سے زیادہ نیکیاں کرنے کی کوشش میں لگا رہتا ہے تو ماضی کے گناہ اس کو غمزدہ نہیں کر سکتے۔

آزمائش اللہ اذیت دینے کے لیے نہیں کچھ سکھانے کے لیے ڈالتا ہے، جتنی جلدی سیکھ لیں گے اتنی جلدی وہ دور ہو گی۔

اگر انسان بڑے گناہ چھوڑ دے تو اس کی چھوٹی چھوٹی بری عادتیں اللہ خود چھڑوا دیتا ہے۔

عشق تو وہ مرض ہے جس کے مریض کو یہ معاشرہ، اس کا میڈیا، اس کا لٹریچر میٹھی نیند سلا کر برسوں تھپکتے رہتے ہیں کیونکہ جو چیزیں رواج میں آ جائیں ان کا غلط ہونا ذہنوں سے نکل جاتا ہے۔

PDF download links of Namal novel







Namal novel complete PDF   |   Download   |  Read Online






Saturday, September 7, 2019

Mushaf Novel By Nimra Ahmed PDF Free Download Or Read Online

Mushaf novel by Nimra Ahmed PDF free download.
You can also read it online, the links are available on this page.






Mushaf is a brilliantly written novel by Nimra Ahmed, who is a very well known and one of the most inspirational novelists of Pakistan. After Jannat K Pattay this is another outstanding literary work by her.






Mushaf novel by Nimra Ahmed | A short review


Mushaf Novel By Nimra Ahmed PDF Free Download Or Read Online
The plot revolves around a beautiful girl, Mehmal Ibraheem. She always remains unhappy due to her bad circumstances, harsh life and cruel relatives. She and her mother are forced to live like the servants in their own house. Her uncles and aunts have occupied her father's property and business.

The title word Mushaf is actually the Arabic name of the Holy Quran. So, one can guess that it must be a religious story and yes it is. However, despite its religious content, the story also contains everything that a reader of the Urdu novels wants to read, such as love, hate, suffering, betrayal, suspense, thrill and harsh realities of life.


Mushaf novel teaches the readers some unforgettable lessons. You will learn, what is patience and how to live peacefully in bad circumstances. The character of Musarrat (Mehmal's mother) is the best example of patience, her fortitude among her cruel relatives is really admirable.

You will also come to know why learning the Holy Quran is so important and what is the exact way to understand Quranic verses and words. How we can enable ourselves to take guidance from Quranic verses when we need. After reading this novel, I am hundred percent sure that you will start thinking about the Holy Quran in a new way.

Another great read: Raja Gidh by Bano Qudsia

Mushaf novel will catch your attention from the very first page when our protagonist Mehmal reaches at a bus stand and once again, she sees that black girl, who always holds an old book with black cover. This time Mehmal can't hide her Curiosity and starts talking to her about that book and she replies with amazing answers. Mehmal thinks that it might be some kind of a magical book which can change the life. In short, Mushaf is kind of a work that will remain in your memory for a long time.

Read some of the best quotes from this novel in Urdu language






کیا کوئی شخص ڈگریوں کا پلندہ لیکر آپ کے سامنے آئے، خود کو سب سے بڑا مذہبی سکالر بتائے تو آپ اس کی بات کو بطور دلیل مان لیں گے؟ کیا آپ کو پہلے دن ہی نہیں بتایا گیا تھا کہ دلیل صرف قرآن مجید یا حدیث ہوتی ہے؟ کسی عالم کی بات دلیل نہیں ہوتی، پھر۔۔۔؟

مصر کی اس عورت سے ایک غلطی ہوئی تھی۔ ایک جرم سرزد ہوا تھا۔ مگر اللہ نے اس کا پردہ رکھ لیا اس کا فعل تو بتایا مگر نام نہیں۔ اور جس چیز کا پردہ اللہ رکھے وہ کھل نہیں سکتا مگر ہم نے یوسف و ذلیخا کے قصے ہر منبر پر جا کر سنائے۔ ہم کیسے لوگ ہیں؟

انسان جس سے سب سے زیادہ محبت کرتا ہے، اللہ اسے اسی کے ہاتھوں سے توڑتا ہے۔ انسان کو اس ٹوٹے ہوئے برتن کی طرح ہونا چاہیئے، جس سے لوگوں کی محبت آئے اور باہر نکل جائے۔

صفا اور مروہ دراصل ایک عورت کے صبر کی نشانی ہیں۔ جب آپ کو بے قصور تپتے صحرا میں چھوڑ دیا جائے اور آپ اس توکل پہ کہ اللہ ہمیں کبھی ضائع نہیں کرے گا، صبر کریں تو پھر زمزم کے میٹھے چشمے پھوٹتے ہیں۔

جس شخص میں واقعی صداقت اور امانت ہوتی ہے اور وہ واقعی قرآن حاصل کرنا چاہتا ہے تو قرآن اس کو دے دیا جاتا ہے۔

مصیبت میں صبر اور نماز دو کنجیاں ہیں، جو آپ کو اللہ تعالی کا ساتھ دلواتی ہیں، ان کے بغیر یہ ساتھ نہیں ملتا۔ اس لئے کوئی مصیبت آئے تو نماز میں زیادہ توجہ اور لگن ہونا چاہیئے۔ مصیبت میں خاموشی کے ساتھ اللہ کی رضا پہ راضی ہو کر جو کچھ موجود ہے اس پر شکر کرنا اور اللہ کے آگے اچھی امید رکھنا صحیح معنی میں صبر ہے۔

Mushaf novel PDF download links







Mushaf novel by Nimra Ahmed PDF  Download  |   Read Online







Wednesday, September 4, 2019

Jannat K Pattay Full Urdu Novel PDF Download Read Online

Jannat K Pattay full Urdu novel PDF download or read online.






You can get this very interesting, thrilling, mysterious and romantic Urdu novel here. The name of the author is Nimra Ahmad, who is also another big name in the Urdu literary world.






She has authored many novels. The best thing about her is that she always tries to teach the readers some extraordinary moral lessons. Her writing style is exceptional and the readers eagerly wait for her new books.

Jannat K Pattay novel description


Jannat K Pattay Full Urdu Novel PDF Download Read Online
Jannat K Pattay full Urdu novel PDF download or read online
The topic of the story is about veil or Hijab. The piece of cloth that usually Muslim girls wear around their face and hair, is called Hijab. The plot revolves around a young, charming girl Haya, who is a law student. She is eager to adopt every new fashion and always ready to follow the latest trends regardless of that the elders of her family don't like this. Her aunts and uncles think that she is a shameless girl but the reality is that although she is a modern girl but she never did any shameless things.

You should also read: Peer e Kamil by Umaira Ahmad

When she gets a scholarship to study in Turkey she happily goes there because her fiance and love Jahan Sikander also lives there. While staying in Turkey, her friendship with two religious girls and a few more incidents really change her life. She starts wearing Hijab but she does this exactly according to her religion. However, she has to face problems even in her own family and she remains amazed when she observes double standards of her family's elders regarding Hijab.

Jannat K Pattay Urdu novel really has an engaging story with some memorable characters and thought provoking lessons. There are some mysterious events in the plot that will keep you engaged. In addition, the end of the novel will also make you happy when Jahan Sikander, who is actually a secret agent plays a great role.

Read some beautiful quotes from this novel in Urdu language






اچھی لڑکیاں اللہ تعالی کی بات مانتی ہیں۔ وہ ہر جگہ نہیں چلی جاتیں، وہ ہر کسی سے نہیں مل لیتیں، وہ ہر بات نہیں کر لیتیں۔ (حضرت عمر رضی اللہ تعالی عنہ)

رہی محبت تو وہ تو اچھی لڑکیوں کو بھی ہو ہی جاتی ہے۔ لیکن جب انہیں یہ پتہ چل جائے کہ وہ محبت انہیں مل ہی نہیں سکتی تو وہ خاموش رہتی ہیں۔ اچھی لڑکیاں خاموش ہی اچھی لگتی ہیں۔

بعض دفعہ انسان اپنے خواب کسی شے میں ڈال کر ان کو سیل بند کر دیتا ہے۔ موم کی ایسی سیل جو کوئی کھول نہ سکے۔ اس نے بھی اپنے خواب مہر بند کر دیے تھے۔

میں رحمان کے بندے کو خوش کرنے کے لیے رحمان کو ناراض نہیں کر سکتی تھی۔ میں جھوٹ نہیں بول سکتی تھی۔ اس کی بڑی بڑی آنکھیں بھیگ گئیں۔ جو جتنا اچھا جھوٹ بولتا ہے بہارے! یہ دنیا اسی کی ہوتی ہے۔ لیکن پھر اس کی آخرت نہیں ہوتی، یہ آئشے گل کہتی ہے۔

ہمارے مسئلے اور ہماری پریشانیاں بھی راز ہی ہوتی ہیں۔ ان کا دوسروں کے سامنے اشتہار نہیں لگاتے۔ جو انسان اپنے آنسو دوسروں سے صاف کرواتا ہے وہ خود کو بے عزت کر دیتا ہے اور جو اپنے آنسو خود پونچھتا ہے وہ پہلے سے بھی مضبوط بن جاتا ہے۔

افشاں کی سب سے پیاری بات یہ تھی کہ اسے جتنا خود سے اتارنے کی کوشش کرو یہ پھیلتی چلی جاتی ہے۔ اور جس کو چھوتی ہے اس کو چمک عنایت کر دیتی ہے۔

Jannat K Pattay full Urdu novel PDF download and read online links







Jannat K Pattay full Urdu novel PDF    Download    Read online






Saturday, August 31, 2019

Aab e Hayat Novel by Umera Ahmed PDF Complete Download

Aab e Hayat novel by Umera Ahmed PDF complete download.






If you are a fan of Umera Ahmed and you have also enjoyed reading Peer e Kamil then you should also read its sequel Aab e Hayat. Another great story of love, sympathy, suffering and hopes.






The readers who really want to know how is the life their favorite characters Salaar and Imama are living after their marriage, will be happy to see them again as a happy couple. You will learn what is the love.
Aab e Hayat Novel by Umera Ahmed PDF Complete Download
Aab e Hayat novel PDF

What the author says about her novel Aab e Hayat


According to the author Umera Ahmed:

"Aab e Hayat is the 2nd part of Peer e Kamil. The part which I could not write in 2004 due to my personal engagements. I had decided to write it a few years later because I wanted that when the success of Peer e Kamil will stop, then I can write its next part without any psychological pressure.

You might also like: Raja Gidh by Bano Qudsia

You read the first part of Salaar and Imama's life ten years before. The second part of their lives you will read in this novel. Peer e Kamil and Aab e Hayat are the two parts of the same writing. And this is the literary work that I didn't write just to get appreciation neither in 2003 nor I wish it today. While writing a lot of aimless words on paper, my only wish was that I could also write some kind of the words which can stop someone when he was going on the wrong way. If one doesn't stop, then at least think again. The wish, the effort is still just that, even today.

Why it was necessary to write the second part of Peer e Kamil? What are the purposes of writing it?

Only Aab e Hayat can give you the answers of these two questions. I had completed this novel in 2010, but later it passed through the revision stages for many times. Now before reaching into your hands, it will be edited again by my pen. The effort is, the thing that reaches to your hands, must be unambiguous, simple and easy".






Furthermore, Umera says:

"After falling in love with each other, Adam and Eve become lifelong companions and try to make a home like the Paradise from where they had been excluded. While they knew that their home is unstable just like a spider's web, which takes a lot of time to complete but also takes a second to break down.

And then the cycle of give and take. What lost what get? What has been lost to get something? A tornado of success, dreams, desires and wishes makes the life just like a detour. And then the next stage of trials. Too many trials and the kind of trials in which nothing remembers, but only ALLAH, who definitely helps. Because only ALLAH is, who always replies to those who call for help.

Then the stage when a human wants to see his next generation rising like him. He realizes that his life has a downfall. Only eternal life is the life which never ends.

You should also read: Zavia by Ashfaq Ahmed

And then those who pass through all these stages by turning into a perfect human, for them, ALLAH who gives everything, whose love is "Aab e Hayat" (the water of endless life), takes them into eternal heavens. The world ends, not life".

Some quotes from the novel in Urdu language


Before downloading Aab e Hayat PDF novel, you might also want to read some of its quotes.





محبت اور شادی کا مطلب یہ نہیں ہوتا کہ دونوں پارٹنرز ایک دوسرے کو اپنے اپنے ہاتھ کی مٹھی میں بند کر کے رکھنا شروع کر دیں۔ اس سے رشتے مضبوط نہیں ہوتے دم گھٹنے لگتا ہے۔ ایک دوسرے کو سپیس دینا،ایک دوسرے کی انفرادی حیثیت تسلیم کرنا، ایک دوسرے کی آزادی کے حق کا احترام کرنا بہت ضروری ہے۔ ہم دونوں اگر صرف ایک دوسرے کے عیب اور کوتاہیاں ڈھونڈتے رہیں گے تو بہت جلد ہمارے دل سے ایک دوسرے کے لئے عزت اور لحاظ ختم ہو جائے گا۔ کسی رشتے کو کتنی بھی محبت سے گوندھا گیا ہو، اگر عزت اور لحاظ چلا جائے تو محبت بھی چلی جاتی ہے۔ یہ دونوں چیزیں محبت کے گھر کی چار دیواری ہیں۔ چار دیواری ختم ہو جائے تو گھر کو بچانا بہت مشکل ہو جاتا ہے۔

کوئی کتنی بھی اچیومنٹ والا دن ہو، چوبیس گھنٹے کے بعد ماضی بن جاتا ہے اور ماضی کے ڈھنڈورے پیٹنے والے لوگ کبھی مستقبل کے بارے میں نہیں سوچتے۔

یہ ضروری نہیں ہوتا کہ صرف اے پلس والا ہی زندگی میں بڑے کام کرے گا۔ بڑا کام اور کامیابی تو اللہ کی طرف سے ہوتی ہے۔ تم دعا کیا کرو کہ اللہ تم سے بہت بڑے کام کروائے اور تمہیں بہت کامیابی دے۔

Aab e Hayat PDF link







Aab e Hayat novel by Umera Ahmed PDF     Download






Wednesday, August 28, 2019

Peer e Kamil By Umaira Ahmad PDF Free Download Or Read Online

Peer e Kamil by Umaira Ahmad PDF free download or read online.






You can download this most loved and extraordinary Urdu novel Peer e Kamil in PDF format from this post. It's author Umaira Ahmad is one of the most popular writers of the present age. This novel is widely praised by the readers of the Urdu literature from all around the world.






Peer e Kamil By Umaira Ahmad PDF Free Download Or Read Online
The story is about a young girl Imama Hashim and a very genius guy Salar Sikander. Imama belongs to Qadyani religion, but ALLAH shows her a bright way so she becomes Muslim. However, it was not an easy decision for her and she has to face troubles. Salar and Imama both hate each other, but later Salar falls in love with her. In the end Imama also becomes so happy when she feels that, Salar is the man who is selected for her by her almighty ALLAH.

According to the author, once in our life ALLAH shows us 2 different ways, a bright and a dark way. Then it's up to us that which way we select for us. If we choose the dark way, then soon we realize that it was a wrong decision. At that time if we want to return then only one thing can help us, a voice which can guide us and we do nothing except follow that voice. Peer e Kamil is such a voice that brings us in light from the dark.

You might also want to read:



Some wonderful quotes from Peer e Kamil novel in Urdu language






اسے اللہ سے خوف آ رہا تھا بے پناہ خوف۔ وہ کس قدر طاقتور تھا کیا نہیں کر سکتا تھا۔ وہ کس قدر مہربان تھا۔ کیا نہیں کرتا تھا۔ انسان کو انسان رکھنا اسے آتا تھا۔ کبھی غضب سے کبھی احسان سے وہ اسے اس کے دائرے میں ہی رکھتا تھا۔

ہم سب اپنی زندگی کے کسی نہ کسی مرحلے پر زمانہ جاہلیت سے ضرور گزرتے ہیں۔ بعض گزر جاتے ہیں۔ بعض ساری زندگی اسی زمانے میں گزار دیتے ہیں۔ کچھ صالح ہوتے ہیں کچھ صالح بنتے ہیں۔ صالح ہونا خوش قسمتی کی بات ہے۔ صالح بننا دو دھاری تلوار پر چلنے کے مترادف ہے۔ اس میں زیادہ وقت لگتا ہے اس میں زیادہ تکلیف سہنی پڑتی ہے۔

اس ملک میں اتنی مسجدیں ہو چکی ہیں کہ اگر پورا پاکستان ایک وقت کی نماز کے لئے مسجدوں میں اکٹھا ہو جائے تو بھی بہت سی مسجدیں خالی رہ جائیں گی۔ میں مسجدیں بنانے پر یقین نہیں رکھتا۔ جہاں لوگ بھوک سے خودکشیاں کرتے پھر رہے ہوں۔ جہاں کچھ خاص طبقوں کی پوری پوری نسل جہالت کے اندھیروں میں بھٹک رہی ہو وہاں مسجد کی بجائے مدرسے کی ضرورت ہے اسکول کی ضرورت ہے۔ تعلیم اور شعور ہو گا اور رزق کمانے کے مواقع، تو اللہ سے محبت ہو گی ورنہ صرف شکوہ ہی ہو گا۔

زندگی میں کبھی نہ کبھی ہم اس مقام پر آ جاتے ہیں جہاں سارے رشتے ختم ہو جاتے ہیں۔ وہاں صرف ہم ہوتے ہیں اور اللہ ہوتا ہے۔ کوئی ماں باپ، کوئی بہن بھائی، کوئی دوست نہیں ہوتا۔ پھر ہمیں پتہ چلتا ہے کہ ہمارے پاوں کے نیچے زمین ہے اور سر کے اوپر آسمان۔ بس صرف ایک اللہ ہے جو ہمیں اس خلا میں تھامے ہوئے ہے۔ پھر پتہ چلتا ہے کہ ہم زمین پر پڑی مٹی کے ڈھیر میں ایک ذرے یا درخت پر لگے ہوئے ایک پتے سے زیادہ کی وقعت نہیں رکھتے۔ اور پھر پتہ چلتا ہے کہ ہمارے ہونے یا نہ ہونے سے صرف ہمیں فرق پڑتا ہے۔

شکر ادا نہ کرنا بھی ایک بیماری ہوتی ہے، ایسی بیماری جو ہمارے دلوں کو روز بروز کشادگی سے تنگی کی طرف لے جاتی ہے۔ جو ہماری زبان پر شکوہ کے علاوہ اور کچھ آنے ہی نہیں دیتی۔ اگر ہمیں اللہ کا شکر ادا کرنے کی عادت نہ ہو تو ہمیں انسانوں کا شکریہ ادا کرنے کی بھی عادت نہیں پڑتی۔ اگر ہمیں خالق کے احسانوں کو بھی یاد رکھنے کی عادت نہ ہو تو ہم کسی مخلوق کے احسان کو بھی یاد رکھنے کی عادت نہیں سیکھ سکتے۔

Peer e Kamil by Umaira Ahmad PDF free download link







Download    ||    Read online






Tuesday, August 27, 2019

Raja Gidh by Bano Qudsia Urdu Novel PDF Free Download

Raja Gidh by Bano Qudsia Urdu novel PDF free download.






You can download this very famous Urdu novel from this page. First published in 1981 and the publisher was Sang-e-Meel publisher. Its author was respected Bano Qudsia (late), who was one of the most liked writers of Pakistan. She wrote several books, short stories, TV dramas and stage plays.






Raja Gidh by Bano Qudsia Urdu Novel PDF Free Download
This novel is about a beautiful young and rich girl Samina Shah. She studies in the master of Sociology class at Govt. Collage Lahore. A young Professor Sohail and her other male classmates want to make love relations with her. However, Samina only loves Aaftab. But due to his parent's pressure he marries with another girl and goes to England. Besides its beautiful story the author also educates you with some wonderful moral lessons.

You might also like:



Some wonderful quotes from Raja Gidh novel in Urdu


You can read some selected quotes from this novel in Urdu language below.





امید بھی بڑی دیوانی چیز ہے۔ لمحوں میں ریگستانوں میں بل ڈوزر چلا کر ٹیوب ویل نصب کر کے زیتون کے باغ لگا دیتی ہے۔

یہ جسم اور دل بڑے بیری ہیں ایک دوسرے کے، جسم روندا جائے تو یہ دل کو بسنے نہیں دیتا، دل مٹھی بند رہے تو یہ جسم کی نگری تباہ کر دیتا ہے۔ ان دونوں کو کبھی آزادی نصیب نہیں ہوتی۔ اللہ جانے کیوں میرے مولا نے ان کو ایک ہی ہتھکڑی پہنا دی۔۔۔

مجھے بھی عرصہ سے کتابوں کی رفاقت نصیب تھی۔ لیکن کتابوں نے زندگی کی ہلکی طرف کو پوشیدہ کر دیا تھا۔ میں محسوس کرتا تھا کہ کتابوں سے محبت کرنے والے عموما زندگی کی اس اہم سمت کو بھول جاتے ہیں۔ وہ اس قدر سنجیدہ ہو جاتے ہیں کہ مزاح مکمل طور پر ان کی زندگی سے نکل جاتا ہے اور وہ لمبا جبہ پہن کر سارا وقت پڑھے ہوے نظریات کی لاٹھی سے دوسروں کی پٹائی میں مصروف رہتے ہیں۔

کچھ لمحے بڑے فیصلہ کن ہوتے ہیں۔ اس وقت یہ طے ہوتا ہے کہ کون کس شخص کا سیارا بنایا جائے گا۔ جس طرح کسی خاص درجہ حرارت پر پہنچ کر ٹھوس مائع میں اور مائع گیس میں بدل جاتا ہے۔ اسی طرح کوئی خاص گھڑی بڑی نتیجہ خیز ہوتی ہے۔ اس وقت ایک قلب کی سوئیاں کسی دوسرے قلب کے طابع کر دی جاتی ہیں۔ پھر جو وقت پہلے کا رپتا ہے وہی وقت دوسرے قلب کی گھڑی بتاتی ہے۔ جو موسم، جو رت، جو دن پہلے قلب میں طلوع ہوتا ہے وہ دوسرے آئینہ میں منعکس ہوتا ہے۔ دوسرے قلب کی اپنی زندگی رک جاتی ہے۔ اس کے بعد اس میں صرف بازگشت کی آواز آتی ہے۔

اس ساری خلقت کو علم نہیں کہ وائے ڈبلیو سی اے میں ایک دبلی پتلی سیمی، ایک ماڈرن لڑکی اپنے آپ پر تیل چھڑک کر مرنے کے لئے تیار کھڑی ہے۔ ہم شہر والے ایک دوسرے سے کتنے بے خبر ہوتے ہیں۔

Download link







Raja Gidh by Bano Qudsia PDF  |  Download






Sunday, August 25, 2019

Zavia by Ashfaq Ahmed PDF Free Download Part 1, 2, 3

Zavia by Ashfaq Ahmed PDF free download part 1, 2 and 3.






You can download this remarkable and full of knowledge book from this page. It is also one of the most read books in Urdu literature. The author, respected sir Ashfaq Ahmed (late) was not only a big author, but he was also a highbrow and a great person.






Zavia by Ashfaq Ahmed PDF Free Download Part 1, 2, 3
Zavia PDF book by Ashfaq Ahmed
Sir Ashfaq wrote many books as well as TV plays. He always tried to make a better society by educating people through his vast knowledge of spirituality and modern science. He taught people, especially youngsters that how they can achieve true happiness.

In this book Zavia, sir Ashfaq explains that how helping others in their small tasks can make us happy. When we make others happy by doing some simple tasks, we automatically become happy.

English translation of some quotes from Zavia and other books by the author


"Sun! Pain is what we feel when we see others in trouble, otherwise even animals can feel their own pain."

"I analyze others at once, I tell just in one second that which person on my street is corrupt, what is the fault in my friend, but I never see my own fault."





"Said: A fly is very kind to human and you are killing it. I said: how is it so kind? He said: without taking any rent or tax it comes to tell  the human that there is dirt here. Keep it clean and I will go. You should first clean your place and see it will go away."

"Leave everyone for your mother, but never leave your mother for anyone because when a mother weeps then angels also weep."

You might also want to read: Shahab Nama by Qudratullah Shahab

"Don't lose courage after hearing voices against you, audience keep making noise, not players."

"Human is a very interesting creature, it can't bear when see animals in trouble, but it becomes happy seeing humans in trouble."

"I have seen sinful people weeping in nights and have seen good people laughing at others. Whose character is good and who's bad only ALLAH knows. Because a human only loves a good human while ALLAH never leave alone even a bad man."

"If you are suffering for something, just try that others don't suffer because of you whether it's relationships, happiness or peace."

"I learnt on several stages of life that there is no one with me except ALLAH. And then I realized that it is too much better if only ALLAH is with me."

Zavia by Ashfaq Ahmed PDF download link







Zavia PDF book Download Part 1  |  Part 2  |  Part 3






Wednesday, August 21, 2019

Shahab Nama by Qudratullah Shahab PDF Free Download

You can download Shahab Nama by Qudratullah Shahab in PDF format for free. One of the most read biographies in Urdu literature.










What the author Mr. Qudrat ULLAH Shahab said about his book Shahab Nama


In the introduction of Shahab Nama, the author said a lot about this wonderful book, but it is not possible to discuss everything here. However, we have described some of the excerpts below. The author said:

"I started writing my daily diary from June 9, 1938. It was not like a daily notebook, but I started writing in my self created shorthand writing every incident or event that I thought was important. It gradually became my habit.

One day I showed all of this script to Ibn-e-Insha, and he laughed. He could not understand my shorthand writing, though he asked why I started writing this diary, especially from the date of June 9? I didn't tell him at that time. However, the readers who will read the last chapter of this book, will also get the secret of this date.

After some time, Ibn-e-Insha went to London for the treatment of his fatal disease. Two months before his death, I also went to London to meet him. This was our last meeting. One day he started examining his life in a bit comic way and then started saying seriously, if he has given his life again then how will he live it. He also asked me if I got a life again, then how will I spend it.





I replied in short, that I will correct my faults, weaknesses and misunderstandings and will live that life just as I am living my recent life. After hearing this, Ibn-e-Insha became alert, he took a page and pen in his hand and ordered me like a school teacher. " Tell me the reasons, in detail".

So, I spoke consistently by analyzing myself and he kept writing my statement just like a Police inspector. I told everything to him. After completing, he gave this script to me and advised me to write a book with complete care. He also said that "I will not be alive to read this book, but my soul will be happy".

Although, I promised to do so, but when I started writing, I became so confused. What I will write? How I will write? In a result, many years passed in this confusion. Finally, I decided to write all of the events, incidents and experiments which impressed me. I will tell everything as it had happened. In addition, I also wanted to clarify a lot of misunderstandings and rumors about me".

In the end Mr. Shahab also told "On each step, Mumtaz Mufti, Bano Qudsia and Ashfaq Ahmed guided me with their positive advices after reading the whole script of this book Shahab Nama".

Shahab Nama PDF download link













Friday, August 16, 2019

مردانہ کمزوری کی علامات یہ کس وجہ سے ہوتی ہے

مردانہ کمزوری کی علامات یہ کس وجہ سے ہوتی ہے

مردانہ کمزوری کیا ہے؟ اور یہ کس وجہ سے ہوتی ہے؟ یہ آپ جان سکیں گے اس تحریر میں۔ اللہ تعالی نے جنسی عمل کا ذریعہ پیدا کر کے انسان کی افزائش اور تسکین کا سامان فراہم کیا ہے۔ اور اس عمل کی بہترین صورت مرد اور عورت کا ملاپ ہے۔ جس کی جائز صورت صرف شادی ہے۔ اس جنسی عمل کی تکمیل کے لیے مرد کو جس قوت کی ضرورت ہوتی ہے اسے قوت باہ یا مردانہ طاقت کہا جاتا ہے۔ اگر مرد جنسی عمل کو درست طریقے سے انجام نہ دے سکے، تو اس حالت کو مردانہ کمزوری کا نام دیا جاتا ہے۔

مردانہ طاقت میں عضوتناسل کے مکمل تناوٗ کی سب سے زیادہ اہمیت ہے۔ اس کے بغیر جنسی عمل ممکن نہیں۔ جبکہ جنسی کمزوری کی حالت میں عضو خاص میں انتشار اور تناؤ کم یا نہ ہونے کے برابر ہوتا ہے۔ اور یوں مرد جنسی عمل کو درست طور پر سرانجام نہیں دے پاتا۔ جبکہ بعض مردوں کو تو تناؤ ہوتا ہی نہیں۔ اور اگر ہو بھی جائے تو دخول کے وقت یا پھر دخول کے بعد ختم ہو جاتا ہے۔ اور یوں مرد مباشرت جاری نہیں رکھ پاتا۔

مردانہ کمزوری کی ایک حالت یہ بھی ہے کہ تناو تو ہوتا ہے مگر دخول سے پہلے ہی انزال ہو جاتا ہے۔ جبکہ کچھ لوگوں کو تو جنسی ملاپ کا خیال آتے ہی مادہ تولید خارج ہو کر جوش ختم ہو جاتا ہے۔ بعض اوقات محض شہوانی تصور آ جانے پر یا پھر عضو خاص کے کسی ملائم کپڑے سے رگڑ لگ جانے پر ہی منی خارج ہو جاتی ہے۔ اس کے برعکس کچھ لوگوں کو انزال ہی نہیں ہوتا۔ جبکہ مردانہ کمزوری کی انتہائی حالت کو نامردی کہتے ہیں۔

تناوٗ کیسے اور کیوں ہوتا ہے؟

جب عضوتناسل میں خون کے بہاؤ میں اضافہ ہوجائے، تو نتیجتا اس میں تناؤ اور سختی پیدا ہوتی ہے۔ اس کا محرک جنسی جذبات اور خیالات ہیں۔ جب مرد کے ذہن میں جنسی خیالات آتے ہیں، تو وہ جنسی طور پر پرجوش ہوجاتا ہے۔ جس کے نتیجے میں عضوتناسل کے پٹھوں کو سکون ملتا ہے اور ان میں خون کے بہاؤ میں اضافہ ہوجاتا ہے۔ یہ خون عضو تناسل کے اندرونی حصوں کو بھر دیتا ہے اور یوں سخت تناؤ پیدا ہوتا ہے۔ لیکن اگر کسی وجہ سے خون عضوتناسل کے اندرونی حصوں میں نہ پہنچ سکے یا کم مقدار میں پہنچے، تو لازمی بات ہے کہ تناؤ مکمل نہیں ہوسکتا۔

مردانہ کمزوری کی علامات


مردانہ کمزوری کی کئی علامات ہیں۔ جن میں عضو خاص میں تناؤ کا پیدا نہ ہونا یا ڈھیلا پن جس سے جنسی ملاپ ممکن نہ ہو سکے۔ اور یہ کیفیت مسلسل رہنے لگے۔

جنسی خواہش میں کمی اور جنسی ملاپ کی طرف رغبت کا نہ ہونا۔

اگر جنسی ملاپ ہو بھی جائے، تو لذت میں کمی یا لذت کا محسوس ہی نہ ہونا اور جلد فارغ ہو جانا۔

طبیعت میں سستی، ہمت میں کمی، چڑچڑاپن، کمر اور ٹانگوں میں درد، بھوک میں کمی کے علاوہ رنگت زرد اور یادداشت کے مسائل بھی پیدا ہو سکتے ہیں۔

مردانہ کمزوری کی وجوہات


اس کی سب سے بڑی وجہ جلق یا مشت زنی ہے۔ ہمارے ہاں چونکہ شادی کا مرحلہ دیر سے آتا ہے اس وجہ سے شادی سے پہلے نوجوان اپنی جنسی خواہشات کی تکمیل کے لئے عموما غیرفطری طریقے اپنا لیتے ہیں۔ جس میں سے ایک مشت زنی ہے۔ اس عمل میں انسان کسی بھی عورت کا تصور کر کے اپنے آلہ تناسل کو اپنے ہاتھوں سے رگڑتا ہے۔ جس سے لذت حاصل ہوتی ہے اور مادہ تولید خارج ہوتا ہے۔ لیکن یہ عمل عضو مخصوص کی خون پہنچانے والی رگوں کو بری طرح سے متاثر کرتا ہے۔ جس کے نتیجے میں خون کی سپلائی متاثر ہوتی ہے اور عضو مخصوص کمزور ہو کر مردانہ کمزوری کا باعث بنتا ہے۔ جبکہ بعض اوقات اس برے عمل سے کچھ رگیں اس طرح کھنچ جاتی ہیں کہ عضو خاص ٹیڑھا ہو جاتا ہے۔


ڈپریشن کا شکار لوگ بھی مردانہ کمزوری کے مرض میں مبتلا ہو سکتے ہیں۔ ڈپریشن ایک ایسا مرض ہے جس میں زندگی کی خواہش ختم ہو جاتی ہے اور کچھ بھی کرنے کو جی نہیں چاہتا۔ یہاں تک کہ جنسی خواہش بھی پیدا نہیں ہوتی اسی وجہ سے تناؤ بھی نہیں ہوتا۔ اس کے علاوہ ڈپریشن کی دوائیوں کے مضر اثرات بھی جنسی خواہش میں کمی کا باعث بنتے ہیں۔ اور جب تک انسان ڈپریشن سے باہر نہیں آتا، وہ مردانہ کمزوری کا شکار رہ سکتا ہے۔

اگر آپ کسی وجہ سے ذہنی دباؤ کا شکار ہیں، تو آپ کو مردانہ کمزوری ہوسکتی ہے۔ ذہنی دباؤ جنسی ہارمونز کی کارکردگی پر اثرانداز ہوتا ہے۔ جس کی وجہ سے ان کی افزائش میں کمی ہوجاتی ہے اور یوں جنسی خواہش بھی کم ہو جاتی ہے۔ لہذا تناو کی کمی کی وجہ سے مرد وظیفہ زوجیت ادا نہیں کر پاتا۔

اگر میاں بیوی میں لمبے عرصے تک علیحدگی ہو یا شوہر کام کے سلسلے میں گھر سے دور مقیم ہو، تو جنسی عمل تعطل کا شکار ہو جاتا ہے۔ اس لمبے تعطل کی وجہ سے مرد کی جنسی کارکردگی میں کمی واقع ہو سکتی ہے، جو مردانہ کمزوری کا باعث بن سکتی ہے۔


کامیاب جنسی عمل کے لئے ذہن کا پرسکون ہونا ضروری ہے۔ اگر مرد دن بھر سخت مشقت کرے، تو وہ تھکاوٹ کا شکار ہوجاتا ہے اور اس حالت میں جنسی خواھش کم ہو جاتی ہے۔ اور اگر جنسی ملاپ کی کوشش کی جائے، تو تناؤ حاصل ہونے میں ناکامی ہو سکتی ہے۔ یہ کیفیت مسلسل جاری رہے، تو مردانہ کمزوری ہو سکتی ہے۔

مرد کا بہت زیادہ سگریٹ پینا یا شراب نوشی کرنا اس کی جنسی صلاحیت کو کم کر دیتا ہے۔ کیونکہ اس سے خون کی نالیاں تنگ ہو جاتی ہیں جسکی وجہ سے جسم کے باقی اعضاء کے ساتھ ساتھ عضو مخصوص کی رگوں میں بھی خون کم مقدار میں پہنچتا ہے۔ اور اس کمی کی وجہ سے تناؤ مکمل نہیں ہو پاتا۔ ایک ریسرچ کے مطابق، 40 سال سے کم عمر کے وہ لوگ جو سگریٹ نوشی کے عادی ہوتے ہیں، ان میں بڑی عمر کے لوگوں کی نسبت مردانہ کمزوری ہونے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔

اس کے علاوہ مختلف قسم کے جسمانی اور نفسیاتی مسائل بھی مردانہ کمزوری کی وجہ بن سکتے ہیں۔ مثلا دل کی بیماری، شوگر، ہائی بلڈپریشر، موٹاپا، برے کولیسٹرول کی زیادتی، گھریلو اور خاندانی مسائل اور بڑھتی ہوئی عمر بھی اس کا سبب ہوسکتے ہیں۔

مردانہ کمزوری کی علامات یہ کس وجہ سے ہوتی ہے

Wednesday, October 17, 2018

کلونجی کے فائدے اور استعمال

کلونجی کے فائدے اور استعمال
کلونجی کے فائدے اور استعمال

کلونجی کے فائدے جانئے اس مضمون میں۔ یہ کالا دانہ اللہ تعالی کی ایک بہت بڑی نعمت ہے۔ ارشاد نبوی ہے۔

ان کالے دانوں کو خود پر لازم کرلو کیونکہ ان میں‌ سوائے موت کے ہر مرض کے لئے شفا ہے۔

یہ گھاس کی ایک قسم کا بیج ہوتا ہے۔ دیکھنے میں بالکل پیاز کے بیجوں سے ملتا جلتا ہے۔ تیزی سے اثر دکھانے والے چھوٹے چھوٹے سے یہ بیج اپنے اندر بے حساب طبی فوائد رکھتے ہیں۔ جدید تحقیقات سے پتا چلتا ہے کہ اس میں موجود عناصر کچھ ایسے فوائد پہنچاتے ہیں جو کسی اور چیز سے حاصل ہونا مشکل ہیں۔ جبکہ اس میں جراثیم کش خصوصیات بھی پائی گئی ہیں۔

اینٹی آکسیڈینٹس سے بھرپور کلونجی کا مزاج گرم اور خشک ہوتا ہے۔ اسی وجہ سے یہ خصوصی طور پرسردی کے امراض اور رطوبتی یعنی بلغمی بیماریوں کے لیے زیادہ مفید ہے۔ جبکہ یہ سردی کے علاوہ گرمی کے امراض میں بھی مفید ہے۔ اس میں وہ سب عناصر بدرجہ اتم پائے جاتے ہیں، جو انسانی جسم کے لئے ضروری ہوتے ہیں۔ یہ عناصر انسانی جسم کے مزاج اور ضرورت کے عین مطابق موجود ہوتے ہیں۔ اس کا استعمال زمانہ قدیم سے کیا جا رہا ہے۔ قدیم معالجین اس کو معدے اور آنتوں کے امراض، دماغی کمزوری اور فالج کے علاوہ بہت سے دوسرے امراض کے لئے بھی استعمال کراتے تھے۔

کلونجی کے استعمال میں احتیاط


کلونجی کے باقاعدہ استعمال کے لئے یاد رکھئے کہ اس کو ایک ماشہ سے دو ماشہ تک ہی کھانا چاہیئے۔ مزید یہ کہ اس کو لگاتار لمبے عرصے تک بھی استعمال نہ کریں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ اس میں کچھ ایسے اجزا بھی پائے جاتے ہیں جن کامسلسل استعمال نقصان دہ ہوسکتا ہے۔ باقاعدہ استعمال کرنے کے لئے ضروری ہے کہ آپ درمیان میں کچھ دنوں کا وقفہ بھی دیتے رہیں۔ بہتر یہ ہے کہ اس کو کسی اور چیز کے ساتھ ملا کر کھایا جائے۔


عام استعمال کا طریقہ یہ ہے کہ روزانہ صبح خالی پیٹ ایک چٹکی کلونجی یا ایک ماشہ اس کا سفوف ایک چمچ شہد کے ساتھ ملا کر کھانے کا معمول بنا لیں، تو اللہ کے حکم سے آپ بےشمار امراض سے بچے رہیں گے۔

کلونجی کے فائدے


نظام انہضام کی اصلاح کے لئے کلونجی اکسیر ہے۔ بد ہضمی،  گیس اور بعد ازطعام پیٹ میں بھاری پن یا اپھارہ ہو جاتا ہو، تو پسی ہوئی کلونجی آدھی چمچی کھانے کے بعد استعمال کرنے سے یہ شکایت دور ہو جاتی ہے۔

برے کولیسٹرول کو کم کرنے میں بیحد موثر ہے۔ جسم میں کہیں بھی کسی بھی قسم کی رکاوٹ ہو، اس کے باقاعدہ استعمال سے دور ہو جاتی ہے۔ یعنی یہ سدوں کو کھول دیتی ہے۔ جبکہ یہ ورموں کوبھی تحلیل کردیتی ہے اورگلٹیوں کو پگھلا کر ختم کر دیتی ہے۔

کلونجی ذیابیطس کےمرض میں بہت مفید ہے۔ اس کے استعمال سے لبلبے میں انسولین کی سطح میں اضافہ ہو جاتا ہے۔ جس سے ذیابیطس کنٹرول میں رہتی ہے۔ اس مقصد کے لئے مریض روزانہ صبح کلونجی کے سات عدد دانے کھا لیا کریں۔


دماغی اور اعصابی کمزوری، رعشہ، فالج، لقوہ اور حافظہ کی کمزوری کی صورت میں کلونجی کی ایک چٹکی شہد کے ساتھ صبح خالی پیٹ کھا لینا چاہیئے۔ چند ماہ کے باقاعدہ استعمال سے اس کے فوائد ظاہر ہو جائیں گے۔

اگر کلونجی کو سرکہ میں ابال کر اس کی بھاپ کو سونگھیں۔ اور اس کو چھان کر اس کے چند قطرے ناک میں ڈالیں، تو اس سے پرانا نزلہ، سر درد اور ناک کے غدود کا ورم دور کرنے میں بہت مدد ملتی ہے۔ اگر سردی کی وجہ سے زکام ہو جائے، تو اس کو توے پر بھون لیں۔ اور پیس کر کسی کپڑے کی تھیلی میں ڈال کر پاس رکھ لیں۔ اب اس کو بار بار سونگھتے رہیں، تو زکام دور ہو جائے گا۔

اللہ کی یہ نعمت پیشاب آور بھی ہے۔ پیشاب کی رکاوٹ یا بند ہونے کی صورت میں اس کا سفوف آدھا چائے کا چمچ وقفے وقفے سے استعمال کرائیں۔ جبکہ گردے یا مثانہ میں پتھری کی شکایت ہو، تو اس کو پانی میں جوش دے کر چھان لیں۔ پھر اس میں شہد ملا کر پلائیں۔


جبکہ خواتین کی حیض کی بندش اور ماہواری کی تمام خرابیوں مثلا نلوں کا درد، کمر کا درد، بدن کا ٹوٹنا، پٹھوں کا کھچاو اور ٹانگوں کے درد وغیرہ میں بھی کلونجی نہایت مفید ہے۔ اس کے لئے ۵ سے ۱۰ رتی تک اس کا سفوف شہد میں ملا کر دن میں دو بار چٹاتے رہیں، تو جلد فائدہ ہوتا ہے۔

پھیپھڑوں اور ہوا کی نالیوں میں سردی کی وجہ سے بلغم جمع ہو کر سانس کی تنگی اور سینے میں درد کا باعث بن جاتا ہے۔ اس صورت میں تین ماشے کلونجی اور تین دانے انجیر کے لیکر ایک پیالی پانی میں جوش دیکر چھان لیں۔ یہ مشروب دو یا تین دن تک صبح و شام پینے سے اللہ کے کرم سے شفا حاصل ہو جاتی ہے۔

وہ خواتین جو شیر خوار بچوں کی ماں ہیں اور ان کو دودھ کم آنے کی شکایت ہو۔ ان کو چاہیئے کہ کلونجی کے چند دانے صبح خالی پیٹ اور رات سوتے وقت دودھ کے ساتھ کھا لیا کریں۔ اس عمل سے ان کی یہ شکایت دور ہو جائے گی۔ تاہم حاملہ خواتین کو چاہیئے کہ وہ کلونجی کے استعمال سے گریز کریں۔ کیونکہ اس سے حمل ساقط ہونے کا خطرہ ہوتا ہے۔


اگر چہرے پرکیل مہاسے ہوں، تو ان کالے دانوں کو سرکے میں پیس کر ایک پیسٹ سا بنا لیں۔ اور رات کو سوتے وقت مہاسوں پر لیپ کر دیں۔ صبح اٹھ کر نیم گرم پانی سے دھو لیں۔ ایک ہفتے کے عمل سے مہاسے ختم ہو جاتے ہیں۔ نیز جسم پر اگر کہیں بھی داغ ہوں، تو بھی اس کا لیپ فائدہ مند ہے۔

کلونجی کو پیس کر مہندی میں مکس کریں اور پھر اس کا لیپ سر پر کریں۔ آدھے گھنٹے بعد دھو لیں۔ یہ عمل باقاعدگی سے کرنے سے بال گرنا بند ہو جاتے ہیں۔

اگر پیٹ میں کیڑے ہوں، تو کلونجی کو سرکے کے ساتھ ملا کر کھایئں، آرام آ جائے گا۔ اور اگر گھر میں اسکی دھونی دی جا ئے، تو یہ کیڑے مکوڑوں اور مچھروں کا خاتمہ کر دیتی ہے۔

کلونجی کے فائدے مکمل طور پر بیان کرنا انسان کے بس کی بات نہیں۔
کلونجی کے فائدے اور استعمال

Monday, October 15, 2018

Kalonji Benefits ya Kalwanji ke Fayde aur Istemal

Kalonji Benefits ya Kalwanji ke Fayde aur Istemal
Kalonji Benefits ya Kalwanji ke Fayde aur Istemal

Kalonji benefits ya Kalwanji ke Fayde jan-ne keliye yeh post mukammal parhiye. Yeh kala dana ALLAH taala ki aik bohat bari naimat hei. Irshad e Nabwi hei:

" In kaale daano ko khud par lazim karlo kyunke in mein siwaye maut ke har marz keliye shifa hei".

Yeh ghas ki aik qism ka beej hota hei. Daikhne mein bilkul Piaz ke beejo se milta julta hei. Taizi se asar dikhane waale chote chote se yeh beej apne andar be inteha tibbi fawaid rakhte hein. Jadeed researches se pata chalta hei ke is mein maujood anasir kuch aise fawaid pohanchate hein, jo kisi aur cheez se hasil hona mushkil hein. Jabke is mein antibiotic khasoosiat bhi payi gayi hein.

Antioxidants se bharpoor Kalonji ka mizaj garm aur khushk hota hei. Isi waja se yeh khasoosi taur par sardi ke amraz aur ratoobati yani balghami beemariyo keliye ziada mufeed hei. Jabke yeh sardi ke ilawa garmi ke amraz mein bhi mufeed hei. 

Is mein woh sab anasir badarja atam paye jate hein, jo insani jism keliye zaroori hote hein. Yeh anasir insani jism ke mizaj aur zaroorat ke ain mutabiq hote hein. Iska istemal zamana qadeem se kiya jaa raha hei. Qadeemi mualijeen isko mayday aur aanto ke amraz, dimaghi kamzori aur faalij ke ilawa bohat se doosre amraz keliye bhi istemal karate thay.

Kalonji ke istemal mein ehtiat


Kalonji ke baqayda istemal keliye yaad rakhiye ke isko 1 masha se 2 masha tak hi khana chahiye. Mazeed yeh ke isko lagatar lambe arse tak bhi istemal na karein. Is ki waja yeh hei ke is mein kuch aise ajza bhi paye jaate hein, jinka musalsal istemal nuqsandeh ho sakta hei. 


Baqayda istemal karne keliye zaroori hei ke aap darmian mein kuch din ka waqfa bhi dete rahein. Behtar yeh hei ke isko kisi aur cheez ke sath mila kar khaya jaye. Aam istemal ka tariqa yeh hei. Ke rozana subha khali pait, 1 chutki Kalonji ya 1 masha iska powder, 1 chamach Shehad ke sath mila kar khane ka mamool bana lein. To ALLAH ke hukam se aap beshumar amraz se bache rahein ge.

Kalonji Benefits ya Kalwanji ke Fayde


Nizame inhazam ki islah keliye Kalonji akseer hei. Badhazmi, Gas aur khane ke baad pait mein bhari pan ya aphara ho jata ho. To pisi hui Kalonji aadhi chamchi khane ke baad istemal karne se yeh shikayat door ho jaati hei. 

Bad Cholesterol ko kam karne mein bhi behad moassir hei. Jism mein kaheen par bhi kisi bhi qism ki rukawat ho, iske baqayda istemal se door ho jaati hei. Yani yeh saddon ko khol deti hei. Jabke yeh wurmo ko bhi tehleel kar deti hei aur Giltiyo ko pighla kar khatam kar deti hei.

Kalonji Ziabitus ke marz mein bohat mufeed hei. Iske istemal se lablabe mein insulin ki satah mein izafa ho jata hei. Jis se Ziabitus control mein rehti hei. Is maqsad keliye mareez rozana subha Kalonji ke 7 adad daane kha liya karein.


Dimaghi aur aasabi kamzori, Raasha, Faalij, Laqwa aur Hafiza ki kamzori ki surat mein, Kalonji ki 1 chutki Shehad ke sath subha khali pait kha leni chahiye. Chand maah ke baqayda istemal se iske fayde zahir ho jayen ge.

Agar Kalonji ko Sirkay mein ubal kar iski bhaap ko soonghein. Aur isko chhan kar iske chand qatray naak mein daalein. To is se purana nazla, sar dard aur naak ke ghadood ka wurm door karne mein bohat madad milti hei. Agar sardi ki waja se zukam ho jaye, to isko tawway par bhoon lein. Aur pees kar kisi kaprde ki thaili mein daal kar paas rakh lein. Ab isko baar baar soonghte rahein to zukam door ho jaye ga.

ALLAH ki yeh naimat paishab awar bhi hei. Paishab ki rukawat ya band hone ki surat mein iska powder aadha chaye ka chamach waqfe waqfe se istemal karaiye. Jabke Gurday ya masana mein pathri ki shikayat ho to isko pani mein josh de kar chhan lejiye. Phir is mein Shehad mila kar pilaiye.


Jabke khwateen ki Haiz ki bandish aur Mahwari ki tamam kharabiyo, maslan Nalon ka dard, kamar ka dard, badan ka tootna, Pathon ka khichao aur taango ke dard waghera mein bhi Kalonji nehayat mufeed hei. Iske liye 5 se 10 ratti tak iska powder Shehad mein mila kar din mein 2 baar chatatay rahein to jald fayda hota hei.

Phaiphron aur hawa ki naaliyo mein sardi ki waja se Balgham jama ho kar saans ki tangi aur seene mein dard ka bayis ban jata hei. Is surat mein 3 maasha Kalonji aur 3 daane Anjeer ke lekar 1 piyali pani mein josh dekar chhan lejiye. Yeh mashroob 2 ya 3 din tak subha sham peene se ALLAH ke karam se shifa hasil ho jati hei.

Woh khwateen jo sheer khwar bacho ki maa hein. Agar unko Doodh kam aane ki shikayat ho. To unko chahiye ke Kalonji ke chand daane subha khali pait aur raat sote waqt Doodh ke sath kha liya karein. Is amal se unki yeh shikayat door ho jaye gi. Tahum, hamila khwateen ko chahiye ke woh iske istemal se guraiz karein. Kyunke is se hamal saqit hone ka khatra hota hei.


Agar face par keel muhasay hon to in kaale daano ko Sirkay mein pees kar aik paste sa bana lejiye. Aur raat ko sote waqt muhason par laip kar dejiye. Subha uth kar neem garm pani se dho lejiye. 1 hafte ke amal se muhasay khatam ho jaate hein. Neez jism par agar kaheen bhi daagh hon, to bhi iska laip fayda mand hei.

Kalonji ko pees kar Mehendi mein mix kejiye aur phir iska laip sar par kejiye. Aadhe ghantay baad dho lejiye. Yeh amal baqaydgi se karne se baal girna band ho jaate hein.

Agar pait mein keerde hon to Kalonji ko Sirkay ke sath mila kar khaiye, aaram aa jaye ga. Aur agar ghar mein iski dhooni di jaye, to yeh keerde makordo aur macharo ka khatima kar deti hei.

Kalonji benefits ya Kalwanji ke Fayde mukammal taur par beyan karna insan ke bas ki baat nahi.

Kalonji Benefits ya Kalwanji ke Fayde aur Istemal